29ص-صَ“ئً'ئ001 حہنو رد قإ۳ٍلِنَْ یق موسکہر اٹ بے ا مئیم وی یں

"۷۳۳ئ0 وَالذ سن اتسعو اھم باحسان ر ضی االله منہم ور ضواعنہ طوییٰ لمن ر اضی ولمن رآمن رآنضی

تستویر الصحینۂ

ٹی تابعنۃ اسی حخسفۃ ر ضر اللہ نہ

: مصخفہ: امام ال خر بن قیام لملت والڈ بن حضرت مد یا مم الد بی نهبدالپارکی فرگیھلی رح ا علیہ :تخربج: مغ را جج ررضاثّمسای 7‏ ت م 0ات نت شضائمر: شش واغاعت : جام نت : المتعاشہ: خاقا و حضرت تن الع لم ردومی شرف تلع نیٹ سآ بادہ لو لی

ہےے۔ے_

یبراصحیشہ فی تاب لی صدییہ

اام اتا خین تفلا قیام الری نکبرالہاری گل

مضم یھر اج رضااشرنی مصبای

ول ن شیا ات اشرمی ‏ مول :بین ات رر مصبای

ء۲٢‎

شع پشرواشاعت جامع چشتیخانقا وحضرت تن لالم

ردوی ے نار

برنٹ امیکسی زلکحتومو پل : 9450110238

ور یرنریں نو مو پال: 9336628735 تنراداشاعت ‏ اکب اد

بہت

٭*

: ملخے کادتہ : جامعہ چشتہ ما نقا و حضرت جع لالم رددلی شریف جع فی لآپاو۔ مو )نل : 9026742301

عرس نار

گراسلا یکی مس شا رح مصونی ردایا تکی قد یاسباں خانظاء ئن الالم ار بابملم و اش کے درمیان ایک نفردمقام رصتی ہے خانقاہ کے موجود ساد یلت ضرت شا ار بت رمیا ں صاحب شبلہبیں ‏ مصوف اعم افننء دش اافیال ء رداق قدروں کے اشن اور مانظاج یکر وشعورکی نمایاں پان ہیںء دعوتی ی ھی سرگرمیوں میس اجے یک یرت وئیک صورت یٹ رو ںکی تو یر ہیں ہلک وکردارکی رخنائیال تین کارکردکیوں سے مر ہیں ء ۱۹89 یں حضرت صاحب سیادہ نے تۓ جوصلوں اورنی امنوں کے مات خاظاء تن العالم کے وع وع لی سن میں مع چشتی نا ھی ایک ادارہ ٢0*0ل0لللھ٭"‏

بت کیل عر سے میں اق بل یی ویر کارکر کیو ںکی بنا پ ایک نمایاں مقام حاصل کیا تخوبصورت سےمنزلہ نسینٹرل بیڈنک لہ کی ر 727٦‏ ۷ت ون رن 82 جدید وقدئ اورکیاب و نایا بکنالو ں کی ایک پھاری تحراد ممتقل ار ی۰ ؛ ایک دج بلاٹ ٤0‏ +ه8“++ رشکووز ینمی رتمارت اوغا نات اعم سئٰ0۳۷۳۷ نے دا نےکودکوت نظارہ درے ری ے_

نی جح رفظ وش رات کے س ات زی استعراد لا را مک گرا لی می درس نا کی لسوت“ را رییء جک ای ائی اس ول چس پایرسیزری اسکول شع نشرواشاعت اوران تام شی جا تیم سیق کاصاف وتفاف نظامادارہ کے روخ دا کو چا چا ند 1 راے اور رسب یقن خر ت کن الع لم علیرالرم کے روعانی فو اور الع ادار رات صاحب جادوطال ارڈ در کی اغلاع بر یکاوشو کاٹ ردے۔

حضرت صاحب ساد نے ایک متخہو ما منص و بے کے گت ایے اسلاف اور اکا بر علماء نوم سیت دا وی بہ لا نے کا ا ھا ادرک

الو ابق و کے اتھاس میس جن مروف بھی ہیں قرت صاحب سادہ ا عھی اور اشاقی 7 سکہاں مت کفکامیاب ہیں ا کا اندازہ ہمارے خھرے ذو مقار نعکوخوب ے اور جا معہ کےکوکی دجن جھ رمطبوعا بھی اس پرشاہدو ناش ہیں ای اشائقی منصو ہے کے تحت سال رواں ددام تی نیکتا ہیں ”تو یبراصحرفہ فی ابعیہ اپی یناور لات ش ہیی ۴ مآ پک خدمت میس می لکررے ہیں۔ تخو یر اللہ بی ا کہ نامىی سے ظا ہر ےکلہ تاب ۸مم شش حضرتنھمان بن خابت زشھی ایٹرعنہ(ولادت ۸۰ء وفات * ۱۵ھ )کی تالبجیت کے اشبات ٹیل امام ااہند ححخرت مول نا عبدالباری ف رگ کی ل(وفات "۱۳ہ )کی شا کا رتصنیف سے موا اکوجشھی مقام اور جرٹگری ہلنری ".تل ا ںیگ ری ماپ ری تاب یس نما یاؤں سے ایی 9988880 ۷۰۷۷ ۱۰۷ رت نکی کامیابکپش شک سے ۔کناب چوک قد انداز لم یکڑاھی اس لے عدیدتقاضوں کے پیش ظ تہ کی ضرور تنسو لک یکئ اب اصاحب سادہ کے ایماءواشارہ برحضرت مو زامفقی اج رضاصاحب اشرقی مصپائی ےرگ لکواضجا مد اہے۔ لچ اواڈ تیر اہجزاء) 02-7 7 پتھوں میں ےہ یتقین سب سے اٹبھی بات ہولی سے لی اک کرت لت ۳ سس8“ درس اسسلائی کے ساٹ کی خی با تکئیںء اس لے تام دردمن ران مامت تحموصیییت کے سا تج ساسا نت صابر یہ سے والہعتہ قھام افراد سےگز انل ےک اپ محبوب ادارہ کے سا تھ ات راک ونتحاون فرا ول : کسی ارجام اپنے مو بو ںکوجلد اح لتک پہوٹا کے فزیا والسلام یاز ام انشرٹی بھاکدری خاوم الد رس والاشاعد جامعچتت خانقاحضرت تن لعل علی ارم سمنت

ما ت تی ریک از :رات تخرت شا :تما را اح ی(نرمیاں ) ساد شن خانقا و نحفرت تغ ال کم علی ال رہ ردوٹی تا تس

۷" ۲ہ "ھت کن العال کے دیوئی مش نکی احاوقجد بد کے لئ ایک مضبوط اش ایی ادارہ تق مکیا جاۓ اور اکا برعلا ءاہلسنت ؛تموصییت کے سرا تق علا و سمل چشقیرصا بر یہ ٢۷۶۶۶۶٢۶۶۶۷۶١١١١ ١١١٤١١ 9 ٦‏ جیں انیل تن سرسے سے اور تئۓے انداز میں منظرعام پر لا کی جائکیںء بفضلہتعالی بخواب شرمن بت رہوااورشعہنشرداشاعت جامعہ چتشت اناو ححضرت جن العال مکی جاب سے بجی یک دپاکی می سکوکی درشن پھر بھ تریی نک ہیں منفظرعام پر لا نے می کا میالی حاصصل ہو کی فالمد شی ڑایک۔

ابی اشاشنی منصصو نے کت سال روال دوب مکتا ہیں شا کی جاری ڑل ای کو9 ”تو یراحرفہ نی ابی لی عطیفزے جوآپ کے پاتھوں یں سے اود دوس رک یکنا ب بات ش ریشم ے جوحضرت موم نا مین فاوٹی اللہ بادیی علیہ الرحمت: کے سواٹھی ناکہ شتقل س۷۶۶۰ ۷۷۶۷۶۶۹۷۷۷۷ عمز یم موا امت اص رضااشر ئی۸صا ۷ ۶ ت۰2۰

گت جہت نت قیاں عطاش رما ۓے-

ین ہاو سیر اللرلینصسٹی ارشعلی ےلم

قرغ دتما راتا تر ی(خرماں) ساد شع خانھا هحضرت تن الم دو شی کی سآ بادیو لی ادگ الال ١٣۱۳ھ‏

اپ گلا ء۶روزبدھ

(حضرت مول نا عپدالمبارییف رای علی الرج ایق تارف )

و (امام نشم ابوعنیفنرشی ارڈرعنہ) اک اعا تارف

ا7

حضرت مود نا مغ جج اھر رضااشرمی مصبای مفقی صاب رک دارالا ڈاء وت ال ہٹ امہ پشت فا نقاءضرت تخلعالم ردوٹی یفن یآ بادہبولی

عای رأر+صلمبا

”تٹویر الصصفۃ فی تابعبۃ ای حضسضہ جیاکہ نام سےعیال ‏ ےکہ یہ کاب رت امام تنم ابوحذیفہ شی اع ہک ا یت کے اشبات مک راھھ یگئی سے

امام الخ بین رت علام کب الپاری فرگ کی علیہ ال رع ن رج سےکنق مر جبآ الیک سو 0٦‏ 9 8 ۷ئ "۰م ۱تت متپا کین ے چو اک شاک 2 5 س ات اھ اس انداز سے رو کنل ہوئ یکیحخرت مولان کی تصنیفا تکی فہرست ٹیل ال کا صرف نام ید بن ےکو ما تھا۔

ت نفاقتی ے خانقا +حضرت جن الال مکی مم لاکر برکی ال موسوم بنا ئی دارالطال' میں حطرت موا نا کی بہگرانتذ رتصنیف ‏ لگن جھ امچاٹی اوہرہ او رکرم خوردہ حعالت مل مخطوطات کے نانے ٹیس پڑی ہہوٹ یھی چناغچر ال کی با زآبادکا یی کے لے حرت یرمیاں صاحب قبلہ ساد شورخ الم ردولوی و برا:ائلٰ جامعہ چچشتی نے ا لک اشا عم تکا ارادوٹرا کت گیا ذمہدادی تج بے ما ا۳نی زاس پر ایک نقرسا مقرمہ کی کا بھی عفر مایا۔ ہر چندکہ میں اس ال نی ںکرحضرت قیام المل تکی تیر پر جچحدکام کرسکوںگرحضر کی دجانےتضورغ اعم کے فان اورمصن کیا ردحای تکومیری طرف بج اس طرخ مت جرف ماد یاکہ بی ا ںکام کے ل ےکم ربستنہ ہوگیا اور جوں جوں یں نے ائں طرح سبق تک را ہیں واہولی چک ۔وماتو فیقی الاباالٹ

چو ںک ہاب صرف امام ان مکی تا ہعیت کےتیوت اھ یکی ہے اورآپ کر اوصاف وخصائل پراصول افاء کے یی لن رقصدا بک سکھھاگیا۔ اس لے اس پرمق رم ہکن

وو اکیحخرت۸اء اش رش لیکش ے6 ظاظ0 جاۓ ت اک عام فا رم یکو اختقمار دبا رض ور یکوشوں بھی دا ققیت حاصل ہوجاۓ- ہنا مقدمہ کے نام پربیس نے امام ام کا جما لی تارف یی کر اہی مناس ب مھا مان ای کیہ بی دریپیش ہو اک مصنف علیرال رح کابھی ادا لکناب میں نکر وضروریی ےکیو ںکہکتناب یی ممتریت پرصاح بکا بکا نماصی ار قب ہوتا سا لئ اےبھی شال مقر ہک رلیا 7

کنا بکیج میس جے بڑی قننیں بی یئ ی٠ی‏ کیو ںکہ اس سے اوراقی ا ےکھزور ہو گے کہ بات لگاتے بی ٹوٹ جاتے تے اس پرد یک نے الییا مرا نی کان یم رض عبا رت شکل پڑ ین می ںآ تج ہم سیاق وباق سے ال اف کک رمائی اک نکن ہی ت کان پچ ایک پر یشاثی ید رآ یک ہکتابسوسالہقد یم زبان تل ےج سی بت آئخ زان دبیان اود کیب واسلوب می رت اگیزجر ی1 سے چناشرارادہہواکرا کی لکردوںگ رپ رخوا لک اک رلفشی خیاخت ہوگی اوداس طرح ا کی اصل رو جرد ہوجات ۓگی۔ اذا ا سکی اصلی تکولعینہ اتی نگ یگئی۔

الک قی رر ننزفل سا رم کیک ای بشتقل ہے۔اب اس اشاعت میں ا سک ی لمات اور سمازیی می ںکھوڑ یىی جرت ىآ ےکراس کےیفیات بڑھ گے ہیں اور عر لی حپارٹں جد ید پراۓ یل ڈ ہا یگئی ہیں ۔ پچ را سک تر جم جومصف نے خودد یکا سے اس کے بامتقائل در جک یاگیاے اورحوالہجا تکینخ کچھ یکرد یکئی ے۔

ظرت مصنف علیرال رہ نے علماء احناف وی احنا کی میں سعے ز ام دمعت رت من کمابوں کے جال سے اینے اس امو نکوم زی نکیا علاوہاز ل دا لعقل واصول صقن و مرش نکی ردشنی میں امام اتمم رشی اائ دع نکی تا بحیت پر جت باہرد انف ماد اور ای نکو یہ لی مکرنے ب رو رکرد یا کہ انار بعہ یٹس سے صرف امام انم بی جالجی ہیں اور جوشرا کیا و لوا ز تق جا بجیت کے لے ضروری ہیں دواام کے ند رکاحقہ با جائے ہیںی۔

سمش میس

بے سر جہں۔ خیب بفدادبی۔ (۳) مر النان وعبرۃ القطان علامہ ذ؛ہی۔(۵) اتل المتتا ہیر- علامہ ان جوزی۔ (۷۹)نعپبضش امحیفہ ۔علا مس یھڑگ (ے) شذ یب الاساء- علامہ نو وی_ (۸) شر خزبۃ لک ر- ولا جج رخسقا نی (۹) نکر الحفاظ-علامہذگی۔(١۱)‏ وفیات الاعیالن و اناء از مان - - ابع خاکان (۱۱) ممد الا مام- خوارزئی ۔(۱۴) ناب (ام انم - سپ داوٗد اہ رہی-۔( ۱۳) مزا قب امام کے علامگردرگی-(١۱)‏ مق رمہ پرا باخھن۔علامہگبداگی- (۱) مسق اظام۔(١۱)ابرا‏ زا "رت ۔علا رتمطرا لٰیٰ_ (۱۸) رخ میٹ -علا مہ مخاوگی_ (۱۹) تر یب الراوئی -علا مہ سیڑٹی _ )۲٢(‏ من الامام- لائی نار دفیرہ- ِ

۷٠٦‏ " "بات مت میم کو کی در نے پا اور ال کی ال حثیت پورے طور پر عیاںل جا ۓے 0( سے ٹرار گنک ننچیں اس لک ارھن سے مود رنرازش ےک تاب می کی ںکوئی خائی ظ1 لے او ضروراطا رخ ہیں ماک موہ ان گا ان ہو سسے_

یہاں اص۷ لو نک وا زکر نے کٹل تارف مصنف علیرال رحم اور امام اتشمم میک اجما لی نتتارف لطورمقد مہ پیل نز رکر تے ہیں ملا جظرکر یں۔

9 اگر میق سربصر باد گید تراغ چشتاں را ہرگز یرہ

موا نا عپرالمپاریی علی ارح ذ گل

دنیاۓ اسلا مکا میک بڑاحصجشن بزرگوں کی وروحاٹی فان سے لالہ زار ہواے ان میس علا وف رگ یگ لکوزاص انیاز حاصل ہے۔ پھر العلوم بافی درل نظا می ملا نظام الد بن ف گی ٌ سے پ یلم سے ا مشنے والی تام خی موی ںآ بھی داریسں اس لا مییہ کے فارشیا عکوفیضیاب ری ہیں ۔عل رگن ل کا خماوادداپنے مامت اوصا فجمیرہ کے باوج داپنے من نکارنامول سےشبرہآفاقی ر ہاے ووا نک یھی خدمات ہیں اوری سبکتا ہہوں اس مقیقت سے مال اکار کس یکوئیں۔

امام ااتلماء قیام الملت دالربین خرت علا مہ مھ قیام الد بین عبدالباری علیہ ال رہ ولادٹ 0۵ھ وفات ۶ھ اما الوادہ ہے چم وا او ری روایات کے این تے۔مطالع سےعیاں ےک آپ نے ایی تق ری زندی یں ایی نیم الشا نکارناے اضجام دیے مجن پرعات اسلا م یکو ہیچاطور پر مر .ےت

ولادت:

مولا نا عمبدرالپاری فرگ ینلی حیات اور خد ما تکی ملغ خز ہت فاط عق ہیں ۔ مولانا صاح بکی ولادت * ا رع ای لوم بش ملا طا اتی کے اھ ہہتقا عم سرافرگیحل ہولی کہ پیدائش رات کے وفت ہولی اس ل ےکا وں ٹیس ١ا‏ م رج ال انی درنجع ہے۔اے

.ط2 کید یں

ا ںآ ناب ع زوکما لی کا وع ٭ ا رب القاٹی ۵ بات لوم بیشن مطالقی ۸۱ پر بی ے۸ میک القلمماء ما حیدرک انل مسر ائۓ سے وا۔ ٢ے‏

7 ئو0+3" نے تصرف فی مرن مواقق تک سے کمن مت ھ7 بارے میں دووں لف الدیا مین ہیں البتہ اتا تو فی ےک ہم ولا نا کی ولا دت انیس بیس ص ری یسوی سک یآ تھو مس د ہاٹی کے درمیان ہوئی۔

نام ولپ: آ پکاائسل نام وی ےس نام ےتآ پکودائی شہر ت گی ۔ مو لا زا حنبیت الاٹرصاحب رنطرازیں-

جدامحبر نے قیام الد بن شجرعبدالپاری ا مگمرائی چئ کاچ سے ان اسماء یک یآ وم مق زرل من الما ء خدانے اس نا مکی برکت سے موا اکوواٹئی قیام لمت ول بن بنادیا- ٣ے‏

آ پکا ساسملرضب میز بان مصطغ علی ال والشنا ‏ “ھا ی رسول ححضرت سینا او الوب افصارگی رشی الد عنہ سے جا تا سے اور ای بت سے علباءفرگ یل اپینےہآ پکو انصار یت ہإں-

رنب ت2

موڑا نا قیام الد بی نیععبدالپاریی امن مولا نا عپدرالو پاب این موا نا عحپرال رز اشی امن موا نا جال اللد بن اہن مولا نا علا الد بن اع ملا ام انوار اف ابع ملا برا ابع ملا مسعیر ان ملا قطب الد نع شہیدسمالوئی قدرس سر جوسھالی رسول ححضرت الد الوب انارک رشی الک اولاد مس یں "ات

٠اتہ ور‎ ٣

سسمااصصسسسب سس

سرظراز ہونا مییو درا راز راز وا ا صوفاءکی ایک جا عت چیہ سے بی مو جو گی او یر سے دوردراز مقامات سےمتلا شیان کو ہکم ک یکا لکششا ںآ مراوروئت کے بڑے بڑ مے فا ومشا رع کا آ نا جانا نیز مال شرع ےل کے لےعوام الا کا رج کر نا ان سب چیزوں نے لک یک ایا پا ما حول قائمکردیا اجس می ںہو است ھا نشی بھی خواسیڈگا رو ںکی بھیٹر میں نظ رآ تھا۔ چنا میم ولا نا کی پرورش وپرداخت پر اس ۶رفانی ماحو لکا ایا کائل اش ھرتب ہواکش یل عرص ہم موا ا ناگواتۓ وشت کےمروج رتا علوم وفنون مم لگرفت ءا 0٦‏

2٦‏ ینشتاھی سگرمیو ںکا ایک سرسری جائزہ ٹیش لکرتے ہو موا نا عنایت الا صاح ب لیت ہإں-

جب عم رمبارک پاری سا لک ہوکی جد ام دکی خدمت میں اع تعمیخوالی ادا ہوک اور رن ٹر یف حافظ حاق مع صاحب اور رکحافظاعبدال باب صاحب نیروفوا بر الرولہ عرعوم سے حف کیا اور فاری وصاب ویر ہکیعلیم متفرق اسا متس کب درس ینعی ش رو فرمائی دو اسلا تم نم در مایا تس"

ا سا ئزہ: زان سے لیا رمتو سطا ت کیک اک کنب حضرت مو نا عبدالباقی برظلہالعا ی رے پڑی 0007ھ ای ا0 سار ور یہ

این مو نا غلام امھ بای سے بھی مطواات میں سے1 کش “تقو لات شا شرب سکم لاجد ایشرسند یلدکیء فاضی مار 9٤4‏ ھ+ھ+" پر ب الک یش ازی شس با زی شر ں مخ ص للع را٦‏ بست باب الاصصط لاب حاشیہ

ضیاکی برشرں عقا ری اور اصول فقہ میں سکم الشووت مولانا ان ال ؟ رمع ل٣ل‏ علیہ سے پڑعں ارد می رز ابد رسالہٹ حاشیر موا نا فلا می ودم رمنقو لا ت مطو(ا ت مولانا عبرالبائ ماہےجے یں اور بب "رس

ری پیر رر رسس پیرمریرو -ربور اپٹنن مرو یا کش ملسا ت وغیرہ کے این سان پڑ لو اکراجاز تعن ی تفر مالی۔اے

مرشی نی ن کا پپلاسر:

۳۰ ددورکسنی می ان والد بی نک رین ۶ ۶ ۶89۹۹ 2 خرف نے گے جب یو ین منورہ حا رہوۓ تو وہاں 0ە32.-س7) جن سی رھ ظاہر ور کی علیرال حم نے والم ماج کے ساق ھآ پکواور بڑے بھا ‏ یکوعد بی ٹک سنرداجازت عطا فرمائی۔حالائہاچھ یآ پ مض چودوسالی کے ےا بنا پرآپ کے واللد نے اعتراخ لب یکیا۔

نکر گا رککیجت ہیں_

مولانا کے والدماجد نے س یی وتر کی رتم الا علیہ ےن ما اک مہرے اس بیہ نےتو اھ یک ع ری رو ں کچھ گی ںکی سے؟ محرث موصوف نے جوابا ار شا دف رما یاکہ مل ےے ا عکا ا رج سنددکی ےجس طر حافظط ابین تج رسلا لی حافظ سییدگی (رکھما ال )کو اجازت عرہمت فرما ادف دوسراسخراورمشا رح کبار سے۔انقات واجاز ات :

٢‏ اھ شی ابیک ہار چرم بین ش رشن سیت بفدراددبصر ہکا مفرفرمایا۔قمام منقامات مقرس می انان سے حاضریی دی اوراس دیار کےکبارعلاء ومشا رح کرام سے ما قات اور ھی استتفاد کیا ۔ بقدادش ری فکی حاضرکی کے دوران فرزن حوث پاک نقیب الاشراف سید پر ال نگیاا فی علیرال رم نے اجاز ٹسل سی کے علادوسنرحد بی ٹگگ ‏ حم تن الی۔

کہ ا س٦‏ زوش رشعپان بی مم لپ نے رخت سفرباندھا تھا اس لے مق مات طی کی زیارت کے بعدش روغ ذ کیا نیش ری کے ل ےتتشریف نے گے ری سے فا رع ہونے کے ببحعد ربا لرسول حا صرہوۓے او شر کےمگوٹی سا لپإں 00 - 0٢‏ دوزران ٣ص‏ 2 7 نمو رھ تراہ ددرت سرت ہیوت

ایک - سر ٠‏ گی لیک ےر م۴ کک دس الم ریب لمت مھ ا جائے 0سا سد نے ے‫ یے ت مج“ : ط 0٭ا

ر2

۳۸و می ا .0 موا نا کا ملک اورح تا مدولظریات

مولاناکی ری زندگی رہب حلنہ کے اشبات او رض فی کاخ ضس اگ ریا۔آپ ای خر یرم کےذر بجتاحیات اعداۓ دن او رگستا مان رسو لک سرکو یکرت رہ تی ً وت کے ایک ز بردست سیا کی اد ہو نے کے پاوجوداپنے عقا مد وظر بات کے تصلب میں 1 م(ۓو'ٔە0

یں مخت تال مول سے م ولا نا کے اع پرخ اہول پر ج دوایک فر دی اختلا فکولیگر مولا نا یی ابل سنت کےا جدار کے عوقا مد ولک ریا تکوملوک وحن بنا ےک یکو شکمرر سے یں تنا ی اہنت رجا ضا ےکا ن 7رکتاںل کے میں پردوکونسا حجذ بکارفر اےگرااس ا ظر تا فلطذٴنی پرورشل سے مع تکوجوخمارہ ہور پا وو تارج بیا نئال -

مولانا کے عقائکد ونظریات کےنتملقی ےکی صفائی بی مکرن ےکی عالائ نت یکوئی ضرورت ڑل تا ہم شیک وارتیاب کے شکار ذجنو ںکی صفائی مین قلب کے لے ان ںکا کر مناس ب بکتاہوں_

اس وقت او قیام الملت والد بین حصراو لی کا ایک پراناأنذمیرے ہیی نظرے جوفرگ یکل کے اک برعلا ےفقو توں بقل ےج سک جع وت ری بکا کا تودمولا نا نے اضجام دیاتھا۔ااس یل موا نانے ابیک ناص دعایت مہ بر ی ‏ ےک جہا ںکہی ںآ پکو پک ی نظ کی با پاجوتر ددہواتواسں کےآ گے ”جا النزاویی “کا وٹ لک سی ہش وضاحت فرمادی ے۔ یں ےڑا ای قیام لمات کی شی ٹیس موا نا کے اؤکاروختا دک چنرتملیال- ہد جوف اس باتک انل ہوک خدا تھا یکا مچھوٹ پولنائکن سے و اف سے یھ / ۱ے ٢‏ ۲- ٹس می رم صلی ال علے:سلم کے بحدییآنے الکن قرا رر ےکاخ سے ر/ے ۳ ۳۔ رسالت پنا صلی الڈدعلیہ عم کےتمام تنعلقا تک یتو وی نکف سخ ے۱۷ کت ھ 4 مسعسسمی پیش ماکان دا ست

کر وت س۔ مجح سآ یا تق رآ مر ووسحت قررت کااارا زم ۰" ے2

ال سفت وجماعحعت کے نزد پیک رانا ”ایت ےک ہکن با نہ تا لی نے سرد رکا نجات صلی اش رعلی ےل رکواولین .خر من )ضی تل , بر قی تا قیامتء ماکان دما کون پل تام جن وا ودک لکاعلم عطافر مایا ہے گے ٣‏

تمورلی اوشرعلیہوسلم کے سخ ہونے میں کی فک نے والا یتو دنن رسول سے یا ید د بے د ین سے یا رز ند لی سے ۔گ/ے

میلا دشر فکوسی کے جن دن وغی رہ سےتشویرد ب کفرسے یل ے۱۷

یام اوفت زکر ولادوت ترالا نام چائڑ و ن سے اور اعاد یف سے نابت ے۔ ۳ا/ے۹

زار پر چادرفا راو رمیٹھائی بی لکرنا سن ہے یا ے ء۱

اشماربز کان دتریا تک انیم جات ے۔یگ/ ۱۸۲

مصن فآتق یتۃ الا یمان نے بلاشہ( موا وی اسا یل دہلوبی ) تو ہین رسو لی مکی اش علیہ ھی ہے یمگ/۱۹۰

رسول اڈ ی٥ی‏ ارشرعلیہ مم کے والد ینک ٹین من تے رس ۱۹۳

یا رکرام عم السلام اور لا کہ کے واکوٹ یھی محسوم رن الا م٠یں۷ض/۵ءے ٢‏

خلیزہ برق لی الترتیب سینا صد بی اکب پھر نا عحرفاردق ؛ چلرسید نا عثا نفنیء پھر ینعی تھی ری اد حم ہیں ریس ٣۰۳٢‏

نخرت ام رمعاو یر شی ال دتنتا کی نہ کےسلسلے نی سے زذہان اورو لکو بانا واجپ ے۔گ/ ۲۵۸

ت ام اق درس داع امت ہے ای پرنو ہہ

۳۰٣

-٥۱

-۳٣ -۳۴

ے۲-۔

واجپ ے۔گل/ ۲٢٢‏

ى‌ اکر لی نعل لم الد کےنور ہیں بھی عقیردنح ےگ ۰

تن بی دعا می ںکپنا ہی وسیلہ کےتضمور٥ی‏ او علیہ ول مکی اعلیم سے ہابت ے۔ صكص/۰٣‏

کہرا ٹیب بدالرسول نام رکھناجا کڑےگ/ ۸ے ۳

حضور| قایس لی اد علیہ وس مکو دا امبلاء والوباءہ والقط ررش والا مکچنا پا انل جا ًَّ ےاوردروتانغ كت م مندرچا جنر مت یںا۔- "“ ا۸

زکرمولووشر/ لف بات کا لا ممنروب ےگ ٦ہ‏

قیام اوقت صصلو وسلامکوجولوگ بدرعت سب کیچ یں وہ ما .2 یں ۔ض/۱٭۱

نام اق نکردوفوں گے چو مک ر1مکھوں سے لگا :اسب ہے لے ٭۱

جس میا دشری فکیتو بی نکرے سلمانو لکواسں سے پر ہیک رنا جا ہے ۱۰١/۶‏ فرقہ دبا یف رق ہمد بین اس کے یما ز درس تکیں ۔اپنے عا 2901/۰ ان کے سراتجھ مالطت اور ممالست اور ا نکو اپقی مد ٹس آنے دینا جائ نہیں

ص/ ٢ءے٢/‏ ۴٢ء٢‏ میق تک یآ گی کات نعط نکر اللزام لگانا دہالی اور بے اما نکہنا ہر ملمان کےےقؾی می سکب ردے ل/۳۱۹

ریا غدمات اورکازہ

گل اس وقت مرکزعلم ڈن بنا ہوا تھا۔ دور راز مقامات سے طل ہیل علو مکی

ہا ںکشزت ےآ ار تے حے اور پنےا نکی اع یئ ی این کے لے در ظامےٴ“ اٹ مک ررکھا تھا جس میں د بی علوم کے ساد سماتھوعربی علو ھی بڑھاۓ جاتے جھے۔ اود آپ جات خوداس یل درس دی اکر تے ےچ سک بددات بد مددسہ چندہی ایام میں اہی اس شس کو یما تو مسادی

۱ بنیی وت تاور جب چیہر یہ ا مرتب فرمائینی اورن یھی ا کی ضرور تنسو لک التآپ کےتزکردڈگارول نے اپ معلورات کے مطا بی جوفہرست تر تیب دک سے دہ کاٹی طو یل و میس اکشیت ا لے علاء وفضلا کی ےج نک یھی خد مات سے اسلا ی دنیاکا شت تہ مال ای ہے چنمحروف اسماء یی یں۔

مولا نا برالقادرصاحب رگ لی ہمولانا قطب میاں صاحب فرگ یی یرٹ )ضحم ہن مولا نا سج اش ل موی ەمولانا سیدنگی الد بن ا رف موی موانا عبدائی صاحب نہد کیاء مولانا لام جیلا لی صاحبأعھی :مولا نا سیرنو ران صاحب اجیر/ گیاء ولا نا سرت ات صاحب اہب ری ہم ولا نا شھرمبیاں صاحب ال ہآ بادییا “مو لا ناشا+حیات اتمرصاحب ردولوکی وی ریم _

لصاشفے:

٣‏ ەًَ جک خاش موضومات شقن لی تصزیذا تکا ایک شییم ذخی رہ چھوڑا ہے تکرہعلا گال کے مولف ن ےآ پک تصفیفا تکاا الیک ناتھامفہرست یک ے جو صصبز بل یں۔

علم صعرفت(ا)خحذیہ ااخوان (۴) ری لفاون )٣۳(‏ اضق (م)سلسملۃ ال ہب (ہ( یل ااصرف (۹) جا الغواند (ے)ارتقاءالشرف(۸) مقرمت الاصرف(۹)شرح پراپیۃا اصرف(۱۰ )شرب فصول اکبری

عطلم نھ (ا١)ورالصپاح‏ شرع ا مصباع (١٣)پری:‏ الطلبہ )٣١(‏ شر برا * اھ (٤)ماثےالنہ‏

حکجمت (۱۵)ش نز الاسحاب )۱١(‏ گان الاصواب(ے١‏ )حاشیترالناف گی ظفرةالزاورر ر۰ (۱۸)رسالہ نی ال مرن اللقد دا پر یرہ

مخطق (۱۹)ا عنام ذ ہان ۲ )شر الا او گی ٣‏ )تقریبالاذبان

اے ہریت لافت ا حاعیۃ درا در ٹک ت 5 ِ - - : یٹ

مخفور (۲۵) رت ااخخور (۲۷) خی الزاوے ۴) فض العالیٰ (۲۸)قر این (۹م) حیات اٹ الاال باب ٣۰(‏ ۳)اخفظر ۳ رسالہ یتین الج زى(۳۲) ا اق الما )۳٣(‏ ان اظربات (٣۳)رم‏ ہلان (۴۵) فا الامول (۳۷)القول الو یر )٣‏ شف الال (۴۸) من ال زان (۹س) احلبق ا ار )٣‏ رسالہ نی مال الطہار؟ (۱م) ذب الیلاعنن )٣(“‏ خی الد عا(۴۳) الھرزلمصعو ن (۴۴) رحمت الامۃ )٣۵(‏ کر ۰ک کک .×× :

تم الام البرم نیش القول ام )١۹(‏ ال الماجر بترم“ اپرورثی رر الُول انصور(۵۰) ار امخفو ربرجرت |شی امطگکو رنی ردلمیز ہب الما ٹور (۵۱) مان جیل(۵۴) وق الا یمان '-۵۳) کل تعلق زیید ات( ۵۳)ااعلاں

فراپقض (۵۵) کاب الفر اکن (۵۹)حاشیۂ سراجی(ے۵) الاظہار ٹی تر بیث الاماء والاضہار

قلا۴ث(۵۸)ذا *:ارعلام(۵۹)ز برق النف رامد(٦٦)کتتاب‏ العتقا د(۱٦)سائس‏ وکام اصولی ضلہ (۷۴)لمم لکوت شرح مسلم الشوت (۷۳)نہای الاکثاف لی درایۃ الاخخلاف( ٢٦)انچاز‏ الا بصارشرں ا نار

ھد عت )٦۵(‏ ا1آ نار امحمدىے )٦١(‏ اأآخار حتصلہ (ك٦)‏ الدہہ الپاہرہ ثْ الاعادیٹث انتواتز, (۸٦)شفاء‏ ااصدور )٦۹(‏ راحی الفواد (٤ے)‏ الا رشاد ثی الاسناد(اع)البا ات الصلیات (۴ع )الہ یکل امنور نی شال الو ے( ۳د )ارقق.ان حر ہٹ (٣عرد‏ )(۴ء) آ ار الا مامت (۵ے )الا رٹجن الزاجر نی الھوادث الیاضرہ (۹ے) المذ ہب الھو ید بماذ ہب الیرامھ(ےے )پر ینا لطد لصلت اہن الی شیب( ۸ے )الہ بن الی حطیفہ مان رام نقتقبہ تفع )نی الا تیآ ::الفاخر(٭ ۸) بیان القرآن (۸۱ )تی رالطاف الرن

ادہ7 ۳۳ س20 و 7 ومسور الونات (۸۷)رسالہ ثی اعراح (ے۸)شفقر الا رن (۸۸)اصول الا رن (۸۹) الاخار الاول (۹۰) تفزت: الاخلاء (۹۱) جلاء الا بصار (۹۳) الحعد ایت المنینہ (۹۳) الرعلۃ الوائ, (۹۳)ارعل از (۹۵) رت امستر شراوصال ا رش (۹۹) عیں حطرت پائرہ (ے۹) اغفوبا رت سیر المادات (۹۸) مت رم لبق الا ری ناب اآخر(۹۹) سیل

عووسوسوسچو راہن ۱ تصو ضف و ساوک )١۰۱(‏ انل الشرکتل ( ۱۰۶ کیل الرشا و ”(۱۰۳) را اص ( ۰۳٠۱م‏ الفواتر(۵) مماسن بٹی )۱۰١(‏ حا ش ینوی اکم ۱۰ رسالہا ڈکارواشغال ۱ ید(۱۰۸)ءاثیما۔۔(۱۰۹) شر تصیروردہ_

ان تصانیف کےعلادد نل فکتب درسیہ پرجو اتی ہیں تی عا شی شر مس رقاضی عاشیہ مبرزاہدہ رسالدحا نشین عاشیظلام گی عاشیشرح ہدایۃ نک ء حاشینٹس بازضہ حاشیفور الاو ارءحاشہ اصول بزدویء حا ش شرب موب اوررسا ےئنس ولا مس سک چوس جلد بس ڈیں ان شیل سے صرف ایک جلد شا ہوگی ۹ے اغلال واوصاف:

آپ من ددجیہ پچ رہ اور میا نہ قد وقاممت کے ما لک تے مایا وقظاروحکنت میں ڈو با ہواد کے والا می بی نظ میں ھرعوب ہہوجا ما ٹھج رعفمار استقد دک ایک بی ملا قات می ںآ دی برسو ںکیصحہت کا لطف اٹھائۓ -

ہر زنر فقطلنظرسے دی اور ہرکام دائز دش لیعت ٹل در ہکم امجام دیتے۔سیاست ٹس حال ا لآ پکوبلند پا گی حاص لیگ رش ربعت اسلا میراورقوم مات کے ممادکا ا تقاخیا لکہ ا یکوا تی سیاست وقیاد ت کا عنوالن خاضس بنا ۓ رکھا-

بمروفت پاوضحور پا / 7 زی ٹک بھی فا نہ ہو نے دی سوا ئا جیما ر ک ےک دوران

تی الارشا.-(حیات وخدات از سرت

رر بر رر را ئڈئد روز اں ونداصتنرماتے رے۔ جماعت کےا دج باپٹد ت کسر لبھی دو دی پیشہراس لے مات ر کھت جا اہج بکئیں دنت ہو جماعت کے ساتحنماز نڑی جا کے۔اورادووظا نف اور نی صیام ونصلواۃ تر کی کر ت ےت یک ہنماز ہگ نہ ٣٣‏ )0 ری پا بنکی سے ادافر مات اور اوت رآنع سے ڑز بائن وقلب کرت رت -

رام وس اکیان اورخا جو ںکا اص خیالل رت ا نکی ضرورٹیں پور یکن ےک یکوشش کر تے۔ نادارعللہ کی حاجت روال یکر تے اور پیش ہا ں لک ٹیش ری ےکیہسوا لکر نے والا نم روم دلوتے_

آپ جہاں پر ایک ز بردست فتیہ حرث اور عابدشب زندہ دار جھ وہیں پ روک اضروںل کےبی ماہرشناور تے اوراس باب می بھی مقائل قدرخدمات امجام دم چنا یر مم زی ںکماڈی ںتصحوف کےعنوان نیف فرما گیل اورطل و مر بہٹ 7٦٣‏ ۶۶ھ" منوبی مو نا روما و ٹوش الک مکا ھی دریسد پاکرتے تھے ٹس میں بی لی بھی حا ضررتے ۔

آپ قادری ضرب رت تے۔شہنشاہ فا در بیت حظضرت سیرعبدالرزاق بانسدی قرین 7۶7۷ ھ٣‏ ہپ ۷ہ کے تا ء ابی مسلسلے یئ ہودئے رس چناج ہآپ نے اےنے والد ماج رتخرت مولانا گپرالوپاپ صاحب انصاری قادری گی ی ے 'فادرکی سلسلے میں بیع تکی اورخلافت واجازت حاصص لک جبلہ وت ک0 ا نات ۷٣‏ ۶ "9۶۷ یں مر برک یا ۸ر تے۔

خت| ای ءحب رسول اوراولیاءکرا مکی عقیدرت سے پوری زندی ھ+ بزدرگان ہکرت سے حا ضرکی د اکر تے فاص طور سے سلطالن اہن دخر اج خ ریب 'واز چم الال تضرت اصع برای ردولوگی اورف رز جرخوت ان حرت سرع بدالرز اق با نسوبی رم اللہ مم رجمتین 0- 02 00 نے جات ۔ یپہاں م٠‏ کک مین دوں

ای ۔ے 7 کا پا

۱ ےسسین تف ےت روز ےے

وصال:

۹٤ھ‏ ت گی ہرچچ زآ پکووافرمقدار مل عطا یھی سواۓےعھ رک ےک یوک یش اڑ تاس (۴۸ )سا لکی عمرمی لپ اس دارفا ی سے دار جاو دای کی طرف رعحلت فرما گے اور بہت سے ےلیکا رنا ےئش نکیل رہ گے

وفا تکا سب فان کاشد دا بتایاجا جا ےجس سے علارع بسیار کے باوج دآپ جار نہ ہو کے مولانا عنایت اللد صاحب لکھھنے ہیں ٢”‏ رجب ٢سا‏ مطالقی ےارجوری ٦ڈ‏ ا+روز یش لولقر نے چا ری سہ پ: رکوچپکہم ولا ن نما زحص رکے لے نیف مار سے جے رخ راۓ جاب ا شر پر خملہ ہوا 93 ہن واصماں ئَِھھهيظ"ئד

-.-..۔۔۔۔۔قطب میاں صاحب (صاجبزدا )کو چچاد ولن کٹل اچ رشریف عی سک غنل تا نے کیا را او جو دی أاررج بکورواشہ ہو نے دالے تے۔قطپ میال صاح بکو آ7 001+ بذذر اجار اطرا دی کی ورا قطب مال صاحب رواشہ ہو ۓ اور وفات سے چن رن نل ےم ولا نا کے حواس ظاہری پرگوفارج کا کائل ان ت نر اس پرجھی نماز کے ا٤فقات‏ می ںآ خر وش تک قبلہ رخ ہوک بایاں بات ا ٹھاکرنماز میس شخول ہوجاتے قطب میاں صاحب کےآنے پر صاتجبزادہ والاتبارتظرت میاں سی رشا: متتاز ات صاحب لہ نے پکارکر فرمایاکہقطب میاں صاح بآ گے ہیں قطب میاں صاح بکو سے اکر دو ٹین مرتب ہتمپ تمیایا۔

-.-.۔ کے کھت ہیں -.-۔.۔.۔۔۔۔ بلظھم سو اگیارہ یے شش بکو ۴ رجب ال رجب ۲ب مطا 9 جن وری ۹۳ا روز سشتہ( شب چھارشنہ ( ااوحضرت نے رعل ٹر ا شہ رپ میں ای کتتسایلہ او رکب رام تھا کو ند یر ے 0 اور ا۸ے کب ریب جب جنازہ ۳ھ ںہ لے کاو رح قب

مال صاحب ثتے نماڑ چناڑہ ةا پرووورڈیو سر تل " 27ے پرددبارہجنا ب کیم مولوک د ہا الک صاحب نے نما : بڑھا لی 0202" آار ا سو شر تک ا نشیف تعداد ۵ ۲۔ * ۳ برار سے انی ۔ اس دان عام ال اسلا مکی دوکا نیس اورقمام مدارس اسلا می سرکارگی من سب بنڑگ تقر با نے چچاد ےشن وائح ہوااور چار بے کےقر یب ؟م لوگ دائیول ہے یھی دی ےکا سسملہدوسرے دن تتک چاری رہا_ ٭ اے

صولا :ارح لعل کی ہشت پپہلوزن دک یکا با یک اجھالی خ اکر جوم نے یی کیا ورنہ اگ شر وسبط کے ساتحھ ا کا جائتزہ لیا جا ےتو ای کیم تاب تیار ہونے ےکوئی ام ماع میں ہوگا۔

ج چم موا نا کے عقا ند ونظ ریات : مسلک ومشرب اورمجمو ا تکیا تے ا من ریت بر سے نو لی عیاں ہیں ۔مولی تعا لی سے دعا ےک ہیں مو نا کی خد مات ججلیلہکو عا مر تن ےکی توف عطافرماۓ۔

وصلى اللہتعالی علیٰ خیر خلقەمحمد و اہو اصحابہاجمعین مدائ ےچین الام شر احررضااشرنی مصباقی نل دیناجچوری ماوم ات ریس والااء جامعہ چشتی انا ض الال علی ارہ ردوٹی شر( یی شآبادلو لی

ھ٤۳۲ رق الاول‎ ٠

٦ار‏ ۲۰۱۱ء روڑ الوار

۱ موا نا عپرالبارکیا حیات وخد مات از نز بہت فارگ 5

ہ٥س‎

٢ے‏ تزکرہعلامفرگیائل از موا نا عنایت الف گ لص ١٭ا‏

7 الضا

ولا نا عپدرالباری ف ںی حیات اورغد مات *اے ۵ے کرد علامفرگیحی یم ے٭ اک

آے الا "9ئ ۸

۹

مخ ازت کر دعلا گل

ے الضا گ١۱/٤۱٢‏

٭اے ایضا ص٢٢۱‏ / ٢٢۳‏

لوٹ موا کا ملک اورعتقا ول ریا ت فمأوای قیامیرے ما خحوذ ہیں-

ام انف ری الشدعنہ: یک اجمالی تتاوف

نحمدۂونصلی ونسلمعلی رسولہالکریم_

نی رج عم وحکمت منوائص بش یعت وعطریقتء امام الائمہءشٴس الا مہ ہخرت امام مم ابوزیفہ رتمید الد عل کی ذات عالی مرتبت ال ز لن پر یقینا ال دکی نشانیوں ٹس سے ایک نان رسول انیڈ لی علیہ وس مکا ایک جزہادرد بین الا مک ایک نت باہرہخاہت ہی ے۔

کمارائسہ دح جن نے پک بارگاہ یش خرارج خقیرت ٹین کیا “ھی جلاات او رشان فنتاجہ تکی داددی اورتف لکی حورت وک رکی وسحت پیٹ من لکرا ٹھے تق کہ بڑے بڑڈے اق بین ن ےآ پ کے فضائل ومنا قب می سکنا بی کیہ ڈ الا ۔ جیہرمیزان تقد پرانجی تو لے می سکوئ یکس ربھ یہی ں پیوڑی_۔

ار بعہییش ےآپ پرژ سکثزت ےکنا ہی یھ یگکیں دوسرو ںکواس می کم حصہ ما سے۔ مموڑانا شی نعمالی نے اسلام کے مت اورشم رہ آذاتی اتی نکی طرف کا کسی جانے وال یکنا ہو ںکی ایک ہل فہرست تارکی ےجس میں منددجذی لکنا و ںکا کر ہے۔ ا- وا چان امام امم نشھمعنا دی امو اھ

-٢‏ ٌائَرعقرالرردالعقیان ہم رم مہ رم ٣‏ منا تب النمان مگ ء ناورم شیب التولٰ ے ۵ود ۴- منا تب التمان تنا وعبدادڈراصمیر ی الم ٣د‏ ۵- نا تب اأنمان ااوااعاس مر من لصلت ال توث ۸٣۳ھ‏ -٢‏ ش تالق الععمان نی من تب النعمان علامہجاران خشری التونی ۸٣ء‏ ہے سے سے سے نوریے ےو داوت

اما بدایل بن گرا ار ۹ہ منا تب اللمان ایال بن ال رخینا نی الت ۰۹و ٭١-‏ منا تب النممان ادج منج اکردری التونی ۸۷2ھ اا۔ تا بالانچا نی ماق اق الما قاضشی این عبدالرالتو ۴۷۳ھ ۳× منا تب الععمان این ای امو ا علا می ۳۔ الم وہب الشرینہ ۳ بستان ئی منا تب النمان 2 گی الد بی نکبدالقادرالت رق الٰتون ۵ے یھ ۵۔ تحض ضز حافظاجلال الد بن سی مقودالمان نی منا تب الععمان مجح ین لوسف من “لی الرشقی ےا- اشثرات السان فی منا تب الععمان حافظطای ن جم رگی ۸- فا رتو رالعتیان ۹۔ منا تب النمان تس الد بن امب نشج السمتو اہی۔ ۰۔ من امم رسالہڈاش لاعف جن اپوسع یش بن داودالیمالیٰ ۳- مم اٹمان صار الین رای من ئن دقاق ا و لٰ۸۹ء ۳- ما تب الا مام انم موا نا مرکا بی افنریی قاضی بخدادالت ن٣ا‏ دہ -۲۳٣‏ من قب الام انم میم زادہسلممان سعدالد بن اف ری ء (ازسرڈالنمان) کب یھ کے ۱ک رمصصنخن نے مقدما کنب می ںآ پکا تج کر وکیا سے علادواز میں ارد زان سآ پک حیات وخدمات ھی جانے والی سوما وق سو کمائیں ح دشار سے او ز ژں- می ٭ نام ولنسب اور پبرائ: نامنعمان با پکانا متا ب تکنفیت ال وضنیرلقب الا مامااپصف مکیت اور قب ای سے ز یادہ ممہورہیں _

ریو راز رر یزرد رظ ہے نھمان بن ایت بن نتمان بن ھرز ان بن ایت ب نیس بن یز دگرد بن شر یا بن وشرواں ۷۱۷۳۰۰پھ۶ کے نزدیک مہ سے ابن ایت امن زی این ماد“ خیب بفدادبی نے امام کے ہپ تے اسمامیل ین مدکی زبا یف لک سےکہدہ کے ہیں کش ایل من حماد من مان بن خاب مم ننمان من ھرز پان ہول-

امام صاحب کےداداکے نام یں جواختلاف پایاجا تا ےس کے تحت کھت ہی ںک_

اما کیل نے امام صاحب کے داداکا نام مان بتایا اود پپردادا کا نام مرز بانع حالائہعام طور پرز ھی اور مادمشمجور ہے۔ نال اجب زی ایمائن لا ئےتو ا نکانا منماان ے بدل دیاگیا .اما یل نے ساسلہ نب کے بیاان بی ز یکا دای اسلا ھی نام لیا اورحبیت اسلا مکا خقتقنا تی بی تھا۔ ز ھی کے با پ کا اصل نام خالہا یداو رہوگ اور ماد ادرمرز پان لب ول کے ۔کبونلہ مات لکی روایت سے اس قدداورگگیحابت ےکا نکا خاندان فار ںکا ایک محر اورشور ما ندان تھا۔ فارش ٹیل رن شھرکومرز پان سکتے ہیں ۔اس ل ہاب ت ت رین قیاس ےک ماد اور مرز بان لب ہیں نہکہ نام ۔حافظ ادا ھاملع نے فیا لگا ایل نماد او رم ز بان چم می الفاظ ہوں گے افھوں نے تاس ما کیو دہ فاری ز با ننجیں جات تے مان میں یق ینا کتاہو ںکہ درتخیقت ماہدادرمز بان کے ایک مع ہیں ماد درائسل وی ما ے: شس کے تی بز رگ اورصردار کے ہیں شمہورمصرص ت ے تن ہکسدادمنزات ماندنہ مرا ء عم رب یلپ نے میلو ا کردیا۔(سیرة مان )

آ پک پیدائژ کس سن می ہوک اس بارے میں قررے اختلاف سے عفن علماء نے اس لے می ںین اقوال کر کے ہیں اہ قول او بی ےکآ پک دلادتں ثح شس وٹ ۔امام ذئری ء امام سیوڑیء امام ائنچجر کی امام اش کل بن کین ءامام ان جوئی ء اما بد اتاد من ای وفا ری نے ا یکوقیول کیا سے ۔خطیب بدادبی ن بھی اسا یل بن حمادبن ا وعفیفنہ سے اس یکو لکیا ےک می ر 7 دارا بیو پیراہوۓ ا باجا تا ہ ےک ہہ ور کے نز ویک بیو ل مقار ہے۔ ۴ قولشانی بی ےکآ پک ل4 می ہوئی۔

زررزضزد یوار درو ررززدنکروا الام الہش یرد ےا تقو لکوشق مااے۔

مشورعالم مولانا سرت اب ال نقادرکی پاکنتانی نے اق یکتاب' امام ان مک بیس یہ تاس لو ٹکماے۔

حضرت امام نشم وٹ پارا ”سن ولادت مُں اختلاف ے علام کوٹ ی مرک علیرال رم نے سے جوگود لال وقر اکن سےتز زی دکیا ہے ۔آ پ سے ڈ رش اپنے داللد کے سماتر کو گے وہاں صحا لی رسول نخر تع براڈہ بن الیارث دش یدع ہکی ز ار تک اوران سی سا ن٦۹‏ یس پھر کو گے اورجھازندہ ے ان سے لے ۔( سوا ہے ببہا تے او کلم ۰ کال مقر مہ انوارالپارگی) ٣‏ تقو ل شاف مر ےکآ پکاسال پدرائ _ الادے۔

لام۶ اورالستش ری وٹبر نے اس وین سے علاہ بددراللد بین ماق ءامنہر کی ءانالی الوفاٹرشی اورائن شاکانںسمیت بت ےشقن علاءنے ا سک لکیا ےک رق 07 "کر کی حتف ظاہرفر ماد ے۔وا ےکآ پک اکھ را او رسک نکوذ تاور پلسلا* تھی جے_ یل ظل,

شس ز مانہییشس امام صاح بکی واادت ہہوئ یش یکو یخخلفعلوم دفو نکاس نشم بنا ہوا تھا اورعروج وارتھاءگی بای پر ال سکی سنہ رک یکرنمیں ,ئ02 لگ رکا تقافلہ جب مز لی شمحورکتک پابچا تقو اما بھی اس سے نع ہو اودرا بدا الیم ینصصیلکیطرف مت ہو ۓے رز یادتی رقبت رفاقت کی طز اابرائیاملیم کے بحدآ باکی پپیڑتارت یس منہنک ہو گے۔

لان ققدر تکوو پجھ اور بی منظو رجا _ رت عا ری علیہ دم گیا رم تک تشرج من شکل میں ہوٹیشھی ۔ونیاکووی ہق رآ نکی لزت اورنتیرحد بی ٹک علاوت ےآ شا ہونا ھا۔ چنا نی رود انگ کی رواقی اورزلف الیل کے پوت کی ایک جدا گا ٹل ادا نم ابوطیضہ کے نام سے ظا ہرہوئی۔

+0089 9 ن٦‎

آ نار ٹین مات پرعیان تے_ الا ۓ سش زبوش مندی سم جافت سارہ بلندی

حضرت اما بجی علیہ ارم جیے جو ہرشناس مرد نے اس سعادت یش کو ملا کر کے آپ کےافکاروخیالا تل بیز رکیاادر یو ںآ پکی زندکی ھی انقلاب کےطوفان سے لز تآ شا وی یکن یہام کک مکی رف تو جکی ال کے اما مکبلاۓ۔ _

واقع یہ بیا نکیا جا تا ےگ ایک د نآپ بازارجار ہے سے اما م بھی جولوفہ کے پور امام تھے۔ا نکا مکان راہ تھا۔ سا نے سے کیو انھوں نے وک رک کی فو جوان طالب علم ہے پا جلا اود و چھ اک ہکہاں حجار ے ہو؟ آپ نے ایک سوداگ رکا نام لیااماھ سجھی ات ےکہا مرا مطلب بین بتھاءتم پڑت ےکس ےہ۴ آپ نے اغ سو کے ساتھ جو اب دی اک ری بھی یں ۔شٹھی ن ےکہاکی” ےکم میں قابلیت کے جوہرنظ رت ہیں :تم علا کی صحبت میں ٹیا ریت

اما ٹج یکینیبحت ن ےپ کے ول یں تہ بای او ربچ راس کے بعد پتحمو لمکم میں ہیی صروف ہو گے-

یلم کی طرف اما مک یتو جرسب سےز یادہکیوں ہہوئی اس سلسلے می علامرسیوٹی شھانھی نے جا رق بفدادے ا پت کاب می اعحیفہ “میس دوش پورقو لٹ لکیا سے ذ یل میس ای یی ملاحظہو۔

خیب بفدادگی نے امام ابو بوسف رد علیہ سے روا ی تک یک امام پئشم رتمند الد ما کپ یت میں نے صعبی لع ما اراد کیا تو علو مکواختیارکر نے اوراس کے امام و مو جب کے بارے میں لوگوں ے اخضصوا بگیا ت ن کاٹ رن اک راو اوررسچر میں و ںکو پڑھا گر یکواتنا کے نہ بڑ ھن د دکیتجھارے دب ہہ وحیشیت کے لے خنطرہ بین جائے۔ یں نے الس جا تکونا لپن دکیا۔ پچ میں نے حد بی ککیاسماعحت وکنابت او رتفاظت کے پو پچ اک ار میں اس طر فکوشت لکرو ں تو ؟ لوگوں ن ےکہ اکر جب تم پوڑ ھے ہو چا

ہے ہہ تج ٹہ اہ 2 تر رک تا جن ا نے نے ہا ےروں ابس ہا تا

2 راو رر ری بے ری ص ارس رن تیر پیر رب و یں فائکدہ؟ تو جواب دیا 2 اک رگ تمای تر ری کےکا ندوں پر اٹھا 0(0(" فاخرہ پنا می ےن کی ودرا ات کوں پہتہت لگا گے۔ رکرو وا کا یمیا ہڈا نے جواب دہ ریم سرنصلیں گتوں سے تفون یں رے یک یل یکوزن گنک ھاممیا لیکو لک یمیا ادرک زی لخوار ہوا 02.0-7۴ ۷ اگ میں فقہح!اص لکروں تو اس کے مرا تکیا ہوں گے؟ تو افتھوں ن ےکا اہ لو کت سے وا لک میں گے :فتق کی طل بک میں گےء اورعدرل وانصاف جا ہیں گے اگ چٹ وتم جوان ہو۔ اک پرییش نت کہاکہاس سے بڈ ھک رکوئ یع لع ہن نہیں ہےلہزایش نے فقہ پ را نقامت کرک اورا ےسسکین لگا۔ شض اصحیفہ )

مراور ۶یا رت سے ہرک یہن مھا جائۓ ےکفقہ کے علادہ دی رعلوم وفون امام کے وس ,3 ے باہرتھ بل تبیہ ےک ہآپ رن کے امام انم تے۔فرق جس اتتا ےک ہآپ پر فقکا